دبستانِ شعر: خوشیوں میں تماشا ادا نکلتی ہے …



……مرزا غالب……خوشیوں میں تماشا ادا نکلتی ہےنگاہ دل سے ترے سرمہ سا نکلتی ہےفشار تنگی خلوت سے بنتی ہے شبنمصبا جو غنچے کے پردے میں جا…

About admin

Check Also

ادب میں نئی تحریک کا سوال

یہ ایک اہم سوال ہے، لیکن یہ کوئی طبع زاد یا بالکل نیا اور اچھوتا …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *