خام تیل کی عالمی قیمتوں میں دوسرے ہفتے بھی کمی


چین میں کورونا وائرس کی وبا کے باعث تیل کی طلب میں کمی اور امریکہ میں شرح سود میں مزید اضافے کے پیش نظر تیل کی قیمتوں میں کمی جاری رہی۔

اس حوالے سے چینی ذرائع کا کہنا ہے کہ کچھ برآمد کنندگان کورونا لاک ڈاؤن کی وجہ سے خام درآمدات کو کم کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

آئل بروکر پی وی ایم کے اسٹیفن برینک نے کہا ہے کہ ابھی تک روسی خام تیل پر یورپی یونین کی پابندی کے باوجود تیل کی قیمتیں اب بھی اس سال کے اختتام پر بڑا دھماکا کرسکتی ہیں۔

غیرملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق برینٹ کروڈ 1105 جی ایم ٹی پر36 سینٹ یا 0.Four فیصد سے کم ہو کر 89.42 ڈالر فی بیرل پر تھا جو اس سے قبل 89.16 ڈالر کی Four ہفتے کی کم ترین سطح کو چھو چکا تھا۔ یو ایس ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیٹ (ڈبلیو ٹی آئی) کروڈ Four سینٹ کم ہوکر 81.60 ڈالر پر آگیا۔

رپورٹ کے مطابق دونوں بینچ مارک ہفتہ وار نقصان کی طرف بڑھ رہے ہیں، برینٹ 6% سے زیادہ کی کمی کےی جانب گامزن ہے جبکہ ڈبلیو ٹی آئی 8% نیچے ہے۔

پانچ دسمبر کو روسی خام تیل پر یورپی یونین کی پابندی اور پٹرولیم برآمد کرنے والے ممالک کی تنظیم اوپیک پلس کی سپلائی کو کم کرنے کے باوجود کساد بازاری کے خدشات حاوی ہیں۔

چھ ماہ میں برینٹ فیوچرز کا پریمیم $4.16 فی بیرل تک گرگیا یہ کمی اگست کے بعد سب سے کم شرح ہے جو مستقبل کی سپلائی کے بارے میں کم تشویش کی نشاندہی کرتا ہے۔

روئٹرز کے ایک سروے کے مطابق ایف ای ڈی سے 13 اور 14 دسمبر کو اپنی پالیسی میٹنگ میں 50 بیسس پوائنٹس سے75 بی پی اضافے کے بعد شرحوں میں اضافے کی توقع ہے۔


About admin

Check Also

ٹی ڈی اے کے سابق سربراہ ایس ایم منیر انتقال کرگئے

کراچی: شہر قائد کی معروف کاروباری شخصیت ایس ایم منیر مختصر علالت کے بعد خالق …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *