پاکستان کے سینما گھر کیوں ویران ہورہے ہیں؟


کراچی : پاکستان کے سینما گھر مالی لحاظ سے نازک صورتحال سے دوچار ہیں اور گزرتے دنوں کے ساتھ ساتھ سینما گھر مزید ویران ہوتے جارہے ہیں، اس پر ستم یہ کہ سینما گھروں کی جگہ تجارتی مقاصد کیلئے عمارتیں بنائی جارہی ہیں۔

پاکستانی فلم انڈسٹری کے عروج کے دور میں فلم کے تمام شعبوں سے وابستہ افراد خوشحالی کی زندگی گزار رہے تھے پھر دیکھتے ہی دیکھتے فلمی صنعت کی سیاست اور گروپ بندیوں نے نگار خانوں کی رونقوں کو بربادی کی جانب دھکیل دیا اور جہاں پر رونق تھی اب وہاں ویرانی کے ڈیرے ہیں۔

اس حوالے سے اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں ممبر سندھ فلم ایگسی بیشنز ایسوسی ایشن فرخ رؤف نے تفصیلی گفتگو کی اور فلم انڈسٹری کی مشکلات پر روشنی ڈالی۔

انہوں نے بتایا کہ تمام تر دعوؤں اور اعلانات کے باوجود حکومتوں کی جانب سے کیے گئے وعدے تاحال وفا نہ ہوسکے، کبھی ملک بھر میں سینما گھروں کی مجموعی تعداد 970 تھی جو آج گھٹ کر زیادہ سے زیادہ 250رہ گئی ہے۔

فرخ رؤف کا کہنا تھا کہ فلم سازوں کی سب سے بڑی مشکل فلم بینوں کو سنیما گھروں تک لانا ہے کیونکہ نیٹ فلیکس کے موجودہ دور میں لوگوں کو ان کی تفریح کا سامان ان کے موبائل میں ہی مل جاتا ہے تو وہ پیٹرول اور ٹکٹ کا خرچہ کرکے سنیما کیوں آئیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ فلمی شائقین تبدیلی چاہتے ہیں، فلم سازوں سے کہتا ہوں کہ فلم کی کہانی اور کاسٹ معیاری اور جدید تقاضوں کے مطابق رکھیں کیونکہ ٹی وی اور سنیما پر ایک جیسے چہرے دیکھ کر لوگ بوریت کا شکار ہوجاتے ہیں۔


About admin

Check Also

پاکستان ہے تو کسی اور ملک سے تجارت کیوں کریں، صدر آذربائیجان

باکو / اسلام آباد : آذر بائیجان کے صدر الہام علیوف نے کہا ہے کہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *