رسید پر 1 روپیہ جارجز سے متعلق اہم وضاحت

ایف بی آر سے منسلک شدہ بڑے ریٹیلرز کی طرف سے جاری کردہ رسید پر مجوزہ 1 روپیہ فی ‏انوائس سروس چارج سے متعلق سوشل میڈیا پر غلط معلومات پھیلانے پر فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ‏پرزور وضاحت جاری کی ہے۔

ایف بی آر نے کہا ہے کہ سوشل میڈیا پر یہ تاثر دیا جارہا ہے کہ سروس چارج 1 روپیہ فی انوائس ‏نہیں لیا جائے گا بلکہ رسیدی رقم کے 1 فیصد کے حساب سے وصول کیا جائے گا جو کہ سراسر ‏غلط ہے۔ یہ بے بنیاد پراپیگینڈا مخصوص عناصر کی طرف سے پھیلایاجا رہا ہے جو کہ بدنیتی پر ‏مبنی ہے۔

ایف بی آر نے کہا ہے کہ 1روپیہ سروس چارج فی رسید سیلز ٹیکس ایکٹ 1990 کی شق 76 کے ‏تحت وصول کیا جا ئے گا۔ انوائس پر چا ہے جتنی بھی کل رقم درج ہو، سروس چارج 1 روپیہ ہی ‏وصول کیا جائے گا۔سروس چارج کے تحت اکھٹی ہونے والی رقم بڑے ریٹیلرز کو ایف بی آر سے ‏منسلک کرنے ، میڈیا کیمپین چلانے اور کسٹمرز کے لئے متعارف کردہ پرائز سکیم پر خرچ ہو گی ‏جو کہ اس سکیم میں شامل ہونے کے لئے بڑے ریٹیلرز کی طرف سے جاری کی گئی اصل رسید کی ‏تصدیق کریں گے۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایف بی آر نے اس حوالے سے بہت ہی موثر اشتہاری مہم کا آغاز کر ‏دیا ہے جو کہ سوشل میڈیا، اخبارات، نیوز چینلز اور ریڈیو پر جاری ہے۔ اس اشتہاری مہم کے ‏ذریعے عوام الناس کو پرائز سکیم اور ایف بی آر ہیڈکوارٹرز میں ماہانہ بنیادوں پر 5 کروڑ 30 لاکھ ‏کے انعامات کے لئے قرعہ اندازی کے انعقاد کے بارے میں آگاہ کیا جارہا ہے۔

اس سلسلے میں پہلی کمپیوٹرائزڈ قرعہ اندازی 15 جنوری 2022 کو ہو گی جس میں 1007 قرعہ ‏اندازی جیتنے والوں کا اعلان کیا جائے گا۔

The put up رسید پر 1 روپیہ جارجز سے متعلق اہم وضاحت appeared first on ARYNews.television | Urdu – Har Lamha Bakhabar.

About admin

Check Also

پاکستان اسٹاک مارکیٹ: گزشتہ ہفتہ کیسا رہا؟

کراچی: گزشتہ ہفتے پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار میں ملا جلا رجحان دیکھا گیا، ہفتے …

Leave a Reply

Your email address will not be published.