یورپین کونسل کے صدر کو بھی پیگاسس کے ذریعے نشانہ بنایا گیا تھا

یورپین کونسل کے موجودہ صدر چارلس مشل کو بھی اسرائیل کے جاسوسی کیلئے بنائے گئے سافٹ ویئر پیگاسس ذایعاے نھاتہ بن

یہ بات یورپین ذرائع ابلاغ میں شائع شدہ رپورٹ میں بتائی گئی۔

خبر کے مطابق یورپین کونسل کے موجودہ صدر چارلس مشل کی اس سافٹ ویئر کے ذریعے اس جاسوسی کی گئی جب وہ بیلجیئم کے ع

اس کے ساتھ ان کے والد بیلجئیم کے سابق وزیر خارجہ لوئیس مشل کا بھی فون ہیک کیا گیا۔ وہ اس وقت یورپین پارلیمنٹ میں بیلجیئم کی مقامی جماعت ایم آر کی جانب سے یورپین پارلیمنٹ کے ممبر تھے۔

ان ذرائع ابلاغ نے اس کیلئے مبینہ طور پر مراکش پر الزام عائد کیا ہے۔ جس کی مراکش حکومت نے سختی سے تردید کی ہے۔ اس کی بنیادی وجہ ایک مراکشی صحافی عمر رادی کے فون میں ملنے والا یہی سپائی ہے جس کے ذریعے اس کی جاسوسی کی گئی۔ ذاتی معلومات کے حصول کے بعد اسے جنسی جرم اور جاسوسی کے الزام میں گذشتہ روز 6 سال کی سزا دی گئی ہے۔

یہ بھی یاد رہے کہ بیلجیئم کے سابق وزیراعظم اور یورپین کونسل کے صدر چارلس مشل کے والد لوئیس مشل یورپ میں اسرائیل بڑے ناقدین میں سے شمار کیے جاتے 1999 سے لیکر 2004 تک بیلجیئم کے وزیر خارجہ رہے.

انہی ذرائع ابلاغ کے مطابق فرانس کے موجودہ صدر ایمانویل ماکغوں کا نام اس فہیرست میں پایا گیگیےا ا سنکی کےت وریع



About admin

Check Also

انگلینڈ، 24 گھنٹوں میں 1 لاکھ 37 ہزار سے زائد کورونا کیسز رپورٹ

دنیا کے مختلف ممالک میں اب بھی سیکڑوں افراد کورونا وائرس سے متاثر ہورہے ہیں۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *