مہنگائی کی وجہ سے پی ٹی آئی امیدواروں کو مشکلات کا سامنا

آزاد کشمیر میں عام انتخابات کے جمارعتوں بورڈ امیدواروں شروع ہیں حکمران جماعت مسلم لیگ ن پاکستان پی ٹی آئی جماعتوں کے درمیان کی رسہ کشی شروع کشمیر میں الیکشن شیڈول اعلان ہے جولائی کے دوسرے یا تیسرے ہفتے میں الیکشن متوقع ہیں سیاسی کی جانب سے اپنے امیدواروں کا ایسی ہفتے متوقع ہے جماعت ن لیگ کی جانب سے ممبران اسمبلی کو دی گی ہے۔

پیپلزپارٹی کے زیادہ امیدوار پرانے ہیں البتہ پی ٹی نیے امیدوار میدان میں اتارے ہیں 2016 کے انتخابات میں آزادکشمیر کے 29 حلقہ انتخاب میں پی ٹی آئی کسی ایک نشست کامیابی ننہیں ملی تھی دو نشسیں مقیم آزاد کشمیر میں مہنگائی کے ساتھ سخت مقابلے کا سامنا کرنا ان کے امیدواروں کے پاس عوام کے سوالوں کا جواب نہیں ہے۔

دوسری جانب ن لیگ کارکردگی کی کر آن والے میں کافی حد تک پوزیشن واضع گی نامور حریت رہنماء صحرائی کے دوران غم ہے تحریک آزادی صحرائی شہید اور ان کے خاندان قربانیوں الفاظ میں پیش کیا جارہا ہےپاسبان حریت جماعت اسلامی دیگر حریت پسند تنظیموں سے بڑے بڑے ہندوستان خلاف مظاہرے میں کو سلام پیش کیا اور جدوجہد آزادی پر فخر کیا گیا جہنوں نے سپنی جان کی قربانی ہے آزادی کی مو

شہید اشرف صحرائی کو زبردست الفاظ میں خراج عقیدت پیچ کہ بھارت نے قید وبند کی صعوبتوں کے اشرف صحرائی کو کمزور کی کوشش کی کے آہنی کر تھے جنہوں نے تحریک آزادی کشمیرکے اپنی قیمتی تک قربان اپنے بیٹے کی شہادت کا غم بھی پیشانی سے برداشت کیا مقبوضہ جموں کشمیر میں جے کے ایل شبیر احمد شاہ, آسیہ مسرت عالم بٹ, ایاز اکبر, ناہیدہ نسرین اور فہمیدہ ہزاروں قیدیوں کو فوری اور غیر رہا کر کے ان زندگیوں کو محفوظ جماعتی حریت فاروق نظر کر کے انہیں آزاد کیاجائے اور دہلی کی تہاڑ جیل میں قید آسیہ اندرابی کی تیزی سے ہوئی صحت پر بھی گہری تشویش پائی جاتی ہے۔

بھارت میں کرونا وائرس سے پیدا والی کشمیری اسیروں زندگیاں خطرے میں ہیں وزیراعظم آزاد کہا میرا دل آج سے بوجھل کے آنسو رو وطن کو رمضان اسیری مبارک مہینے میں شہادت کے عظیم مرتبے کو پہنچا کے کو کندھا بھی نہیں دے سکتے.انہوں نے کہا صحرائی اسقدر بہادر تھے جب انہیں بیٹے خبر ملی تھا ۔صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان آزاد حیدر محمد اشرف صحرئیائی کی اا ارت تکور پڑا کنٹرول پر پاکستان اور بھارت کی کے بندی کو او سی کے قریب آباد آزاد لاکھوں شہریوں کی زندگی جائیداد کو اسی طرح ایل جانب شہریوں فائر لیے سے آگے بھارت کے ساتھ دو طرفہ مذاکرات یا اس سے جڑے دیگر ضمنی اق دامات کو بھارت کے مقبوضہ کشمیر میں فسطائی اقدامات کی تو ثیق سمجھا جائیگا۔

بھارت اگر بات چیت اور مذاکرات کے ذریعے تنازعہ حل میں سنجیدہ ہے تو وہ کشمیر میں جاری کے تناسب میں طاقت زور پر تبدیلی, کی زمین ہتھیانے کا جنگ بندی کی میں کشمیریوں پر مظالم کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے عید کے شمالی کشمیر میں تین نوجوانوں کو گیا ایک طرف سئزفائر ڈرامہ دوسری طرف مقبوضہ وادی میں مظالم کا نیاسلسلہ کیا ہوا ہے۔

عیدالفطر کے موقع پر بھارتی افواج کنٹرول تین مقامات چیلیانہ چکوٹھی اور تتری نوٹ پر کو مٹھیاں پیش کیں پاک آرمی بھی مٹھیاں پیش روز کو الزم اڑا کہ اس میں مجاہدین ہیں اگر واقعی جنگ بندی پھر بھارت کی جیلوں میں پابند قیدیوں کو رہا کرے, کی شناخت اور لیے ثقافتی مقبوضہ کی 2019 سے پہلے والی پوزیشن بحال کرنے کے علاوہ بھارت کے 32 لاکھ شہریوں کو دیئے گئے کشمیر کے ڈومیسائل منسوخ کرے کے کسی رسمی یا رسمی بات چیت سے یہ کم سے ہیں جن کا مذاکرات کے کی کامیابی کے لیے ضروری ہے پاکستان کو اپنے اس موقف پر قائم رہنا چاہیے کہ بھارت کے ساتھ چیت صرف اسی صورت میں ہو گی مقبوضہ کشکشو۔ر کی اا ت ویر کی اگ ست 2019 سے نکر ب

بھارت کے ساتھ دو طرفہ مذاکرات شملہ اور لاہور مذاکرات اور بعد میں قانونی قبضہ مستحکم کرنے کے لیے استعمال کیا 2016 کیا برہان مظفر وانی کی شہادت اور اب 2019 میں بھارت کا مقبوضہ کشمیر پر یک بار اور محاصرے کے بعد ایک بار پھر عالمی تنازعہ کے طور پر دنیا میں ہے۔



About admin

Check Also

جلد انتخابات کا مطالبہ: حکومت دباؤ میں نہیں آئے گی

ملک کے طول و عرض میں سیلابی پانی ابھی بھی موجود ہے 14 جون سے …

Leave a Reply

Your email address will not be published.