جہانگیر ترین کو مقدمات میں ریلیف مل جائے گا؟

اقوام متحدہ جنرل اسمبلی اجلاس سے کے خطاب یہاں ملتان میں ان کے حامیوں نے وتوصیف کے باندھ لئے کہ ملتان سپوت نے یہ بیان کرنے کی پوری طاقت ایک طویل عرصہ کے بعد شاہ محمود قریشی کے حامیوں کو ایک بڑا فراہم ہوا ہے کہ جس پر وہ اپنے لیڈر کی کو کھل کر خراج تحسین پیش کررہے

ملتان میں بھی فلسطینیوں کے حق ریلیاں اور ان محمود قریشی کی بڑی بڑی حامیوں نے اٹھا رکھی, پہلی بار فلسطین بھی شرکت کی ڈپٹی کمشنراور دیگر افسران ریلیوں میں سیاسی کارکنوں اور عوام ساتھ شریک ہوئے, شاہ محمود قریشی یہ ایک بہت بڑا ریلیف, جو انہیں ایسے موقع ہے ، جب جہانگیر ترین گروپ کے حوالے سے سامنا

جہانگیر ترین گروپ کے جن ارکان اسمبلی کی وزیراعلی بزدار سے ملاقات ہوئی, انہوں نے کو کہ وزیراعلی پنجاب میں اپنی غلطیوں ہے اور محمود قریشی جس طرح اپنی تقریروں میں جہانگیر ترین ارکان پر تنقیدی وارکرتے رہے اور سخت میں وارننگ دیتے وہ بھی ان کریں گے جائیں گے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر کہ کے اجلاس شرکت کے لئے جانے سے پہلے قریشی نے یہ اعلان تھا کہ ترین سے کو اور ڈال اختلافات اپنے کرچکے ہیں, یہ بات شاید انہیں لئے پیش دن جہانگیر ترین گروپ نے اسمبلیوں اعلان کردیا تھااور کی شاہ اپنے سر لینے کی بجائے اعلان کرنا مناسب سمجھا کہ ان کی جہانگیر ترین سے کوئی مخاصمت نہیں ہے۔

بہرحال جہانگیر ترین ہم خیال گروپ بظاہر جیت اوران کی بات جو پہلے سنی تھی اب نہ صرف سے سنی اس پر ساتھ گیا ہے, جو وزیراعلی ہاؤس میں صرف جہانگیر ترین ہم خیال گروپ کے معاملات کو دیکھے گا, یہ نوعیت کا پہلا واقعہ کہ سیاسی گروپ کو رضامند کرنے کے لئے بندوبست کیا گیا

مگر ذرائع کے مطابق ابھی یہ معاملہ پوری طرح حل ہوا, بلکہ یہ کہنا چاہیئےکہ وقتی پر سیز فائر ہے, اس کے بعد ” انتظار کرو اور دیکھو ” کی پالیسی جہانگیر ترین ہم خیال گروپ ارکان اپنے مفادات کا تحفظ جاری رکھیں گے, سب سے بڑی گنجل جہانگیر ترین ریلیف جب یہ ہم خیال گروپ تشکیل گیا تھا, تو کی ہی یہی کہ جہانگیر ترین, وہ ناانصافی ہے اور تک انہیں ختم نہیں کیا جائے گا, قومی اور صوبائی اسمبلی کے ارکان کے ساتھ کھڑے رہیں گے, ابھی اس معاملہ میں کوئی بڑی پیشرفت نہیں ہوئی۔

جہانگیرترین اور ان کے بیٹے علی ترین کو 31 مئی تک عبوری ضمانت توسیع مل گئی ہے, دیکھنا یہ ہے مقدمہ میں اگر جہانگیرترین ضمانت کنفرم ہوجاتی سمجھا جائےگا کہ ہے, جس کے لئے ہم گروپ بنایا گیا تھا, لیکن اگرایسا نہیں ہوتا, تو ترین گروپ کہاں کھڑا, کیا لائحہ عمل اختیار کرے جو کچھ آج جارہا ہے کہ تحریک انصاف ساتھ کھڑے ہیں, توکیا صورت میں بھی وہ عمران خان اور تحریک انصاف کا ساتھ دیں گے.ادھر سینٹ میں اپوزیشن لیڈراور وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے ایک نیا پینڈورا باکس کھول دیا ہے۔

انہوں نے تسلیم کیا ہے کہ سینٹ انتخاب میں آئی کے ارکان انہیں ووٹ دیا تھا, وہ سے ہیں, اگریہ درست ہے تو پھر سوالات اٹھتے ہیں اعتماد کو ووٹ, تو انہیں ارکان نے ووٹ دے کر انہیں نکالا, گویا ترین موقع پر بھی عمران خان , جو ارکان اسمبلی کے کہنے پر یوسف گیلانی کو ووٹ پر وزیراعظم عمران کو ووٹ نہیں بھی دے سکتے, یہ گویا ایک اہم انکشاف ہے, جو جہانگیر ترین کے خیال ارکان اسمبلی کے عزائم کو ظاہر کرتا ہے.

یہ اس بات کا بھی اظہار ہے کہ کسی بھی یہ ہم خیال گروپ کوئی بازی پلٹ سکتا ہے رضا گیلانی نے یہ انکشاف ذکر ہے کہ جب سینٹ کا انتخاب ہورہاتھا, تو گیلانی سے سوال گیا تھا کہ جہانگیر ترین کررہے ہیں, توانہوں جواب دیا تھا کہ ان سے کوئی سے رشتہ داری ہے, یہ اس بات کا اشارہ تھا کہ اندرخانے جہانگیر, یوسف رضا گیلانی کو سینیٹر بنانے کا فیصلہ کرچکے اور ان کے ہم خیال کے کہنے پر یوسف رضا گیلانی کے میں ووٹ دے چکے ہیں.

ان کے خلاف کارروائی کی بجائے عمران خان نے شاید اس لئے یہ دیا تھا کہ وہ تحریک اعتماد یں انہیں ہووٹ د ر ر ال سینئر مسلم لیگی رہنما مخدوم جاویدہاشمی کے دامادکے میرج کنٹرولڈ شیڈ کو گرانے کا معاملہ موضوع بحث بنا ہوا ہے, ملتان کی قلابازیوں نے اس مذید سیاسی اہم کردار ادا کیا ملتان سے سے تقریبا 20 کلومیٹر واقع ایک ٹاؤن کمیٹی ہے, مخدوم جاوید ہاشمی بقول ان کے بعض سخت بیانات کی وجہ سے ان نزلہ گرایاگیا ہے۔



About admin

Check Also

کیا مشکل معاشی فیصلوں کا نقصان ’’ن لیگ‘‘ کو ہوگا؟

اس حقیقت کے باوجود کہ اپوزیشن کی جانب سے بڑے بڑے عوامی اجتماعات ٗ جلسے …

Leave a Reply

Your email address will not be published.