پانی کی غیر منصفانہ تقسیم پر سندھ سراپا احتجاج

گزشتہ ہفتےسندھ کابینہ ن میں صوبوں مابین پرغیر منصفانہ کی تقسیم کے خلاف بازگزشت سنائی کابینہ نے جاری خریف کے دوران قلت پر شدید اظہار کرتے ہوئے اسے ایک ” سندھ دشمنی ” رویہ قرار دیتے ہوئے وفاقی حکومت پر زور دیا کہ وہ 1991 کے آبی معاہدے کے مطابق صوبوں کے مابین پانی کی قلت کو تقسیم کرے۔ اراکین نے تحفظات پر نتیجہ اخذ کرتے ہوئے اجلاس میں بتایا کہ سندھ میں تباہ تباہ ہیر ہیں اور IRSA امہے معآاکدے رن مس معماہدے پنر عمل اجلاس کے آغاز میں اراکین کابینہ کا کہنا تھا کہ پانی کی قلت کے باعث سندھ کاشتکار کو شدید پریشانی پڑا سان ا کا سامن

اراکین کابینہ نے اعتراف کیا کہ سسٹم میں پانی کی ہے لیکن معاہدے کے تحت متفقہ مطابق یہ قلت صوبوں تقسیم کی جانی چاہئے نہیں کیا جارہا اور پنجاب مہربانی کی جارہی کابینہ نے محکمہ بلدیات نے کابینہ استدعا حیدرآباد میونسپل قاسم آباد, کوٹری, ٹنڈو الہیار میونسپل کمیٹیز کے ساتھ کے ممبران اور منتقلی اثاثہ جات کو سپرد کیا جائے تاکہ کی سے کابینہ نے سندھ ملازمین اولڈ ایج بینیفٹ انسٹیٹیوٹ کے بورڈ آف ٹرسٹیز کی دو سال کی مدت تقرری کی منظوری دے دی.

سندھ کابینہ کا ڈکیتوں کے خلاف تیز فیصلہ کیا اور پولیس کو ہدایت جاری کی کچے کے علاقے کو سے کلئر کے خلاف سخت کیا نے کا چیئرمین کردیا.ہےوزیراطلاعات سندھ ناصر حسین شاہ ارسا چیئر مین سندھ پر تشدد میں بڑھے گی اور سیاست بھی ہو گی اس ضمن میں کے صوبائی وزیر برائے آبپاشی سہیل انور سیال نے ہے کہ سندھ کے ساتھ مسلسل ہ وارہی ہے ک.

یہ معاملہ سیاسی نہیں بلکل صوبائی ارسا سپورٹ کر ہے اور پی ٹی آئی کی کے ساتھ ملکر سندھ زیادتی کر بلاول ہاؤس میڈیا زراعت کانفرنس کہا خطاب سندھ میں گندم کے بعد سب زیادہ فصل کاشت جاتی ہےاس سال سترہ لاکھ نوے پر چاول کی فصل گیکئی اضلاع فصل بھی لگائی فصل کے ہونے ہے وجہ سے اس سال ایک لاکھ سے کپاس سندھ لگے گی پانی کی کمی سے لگائی گئی ہے اسے بھی مشکل گنے کی فصل دس اس ہزار ایک گنا لگاسکے ہیںسندھ میں پانی کی شدید قلت سے زراعت ہے وفاقی حکومت نےا ارسا کو یرغمال بنایا ہے ہم بلوچستان نہیں روک رہےجب سندھ پانی کم ملے گا پانی کم جائے گا۔

اس حکومت کا سندھ کے ساتھ رویہ بہتر نہیں ہےہم ہر فورم پر اس ظلم کے خلاف آواز بلند کرینگے۔ ادھر پانی کے مسلے پر پی تی آئی, متحدہ, اور پاک سر زمیں پارٹی نے سخت تنقید کا نشانہ ہے پی ٹی سند ھ پر حکومت ہےسندھ حکومت متعلقہ فورمز پر جانے کی بجاء صرف کھیل رہی ہے, سندھ حکومت اپنے سمیت بلوچستان کا پانی بھی کررہی ہے, ارسا کا حکومت کے کرچکا ہے, سندھ حکومت پہچانے کا انتظام نہیںہےسندھ میں جیالوں کی زمینیں آباد اور عام بنجر بن چکی ہیں, جبکہ پی ٹی کے خرم شیر زمان کہا کسندھ کا پانی سیاسی شخصیات اور چہیتے کو دیا جارہا

پاک سر زمیں پارٹی کے سربراہ کمال میں قلت سندھ حکومت پر نقطہ چینی کرتے ہوئے کہ بلاول بھٹو زرداری مسلے پر پنجاب ناراض ہیں میں انکو میں آج بھی ٹینکرز پانی ہیں کراچی کے شہری بوند بوند کو ترس رہے.بلاول بھٹو ذرا کراچی کے پانی کے معاملے پر آنکھیں کراچی کو سندھ کے کے پانی کا ملتا ہے پر میر نادر مگسی نے جاشتکاروں کو نا ذمہ دار پی پی کی حکومت کو قرار کہا کہ سندھ کے میں پانی پانی کی منجمنٹ کی ہونے مل باوجود افسوص کے ہمارے حکومت ہے پارٹی وڈیروں کورس توڑے غریب کاشتکار کو پانی نہیں مل اعلی سندھ اس معاملے درست نہیں ہو رینجر مدسی انتہائی سنجیدہ ہے اور انہوں نے جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے سندھ میں پانی قلت کا زمہ دار اپنی ہی حکومت کو ٹھہرایا ہے وزیر اعظم نے واٹر پر تعیناتی کا دیا ہے پاکستان پیپلز پارٹی سندھ کی سندھ سے پانی زیادتی سندھ میں شدید کمی اور بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف three جون سے 15 جو ااکا



About admin

Check Also

کیا مشکل معاشی فیصلوں کا نقصان ’’ن لیگ‘‘ کو ہوگا؟

اس حقیقت کے باوجود کہ اپوزیشن کی جانب سے بڑے بڑے عوامی اجتماعات ٗ جلسے …

Leave a Reply

Your email address will not be published.