” جذباتی چہرے ” والا روبوٹ


کولمبیا یونیورسٹی کے انجینئروں نے انسان نما نرم چہرے والا تیار کیا ہے ، جس کو ” ایوا ” (eva) اکا ۔ام دہےا اکا نام دیا یہ اپنے چہرے سے انسانی تاثرات اور جذبات کا اظہار کرسکتا ہے۔ ایوا کا چہرہ کسی بالغ انسان جیسا ہے جو ایک نرم ربر استعمال کرکے ، تھری ڈی پرنٹر سے بنایا گیا۔ ربر کے اس چہرے کو ایک کھوپڑی پر لگایا گیا ہے جب کہ کے پچھلے حصے کو متعدد مقامات پر باریک تاروں کے ذ وں س س

چہرے پر کوئی خاص تاثر یا جذبہ ظاہر کرنے موٹروں کو ایک مخصوص ترتیب سے کر اس چہرے کے الگ حصوں میں مختلف تناؤ جاتا ہے.اس مصنوعی ذہانت کے ذریعے منظم حرکت اور چہرے کے مختلف حصوں میں مخصوص تناؤ سے مطلوبہ تاثرات و جذبات پیدا کرسکے.

اس وقت یہ روبوٹ چہرے پرغصے, اکتاہٹ, خوف, لطف, ​​حیرت اور درجنوں دوسرے انسانی جذبات اظہار کرسکتا ہے.انسانی کی کرنے کےلیے یہ ایک کیمرے کے ذریعے ہوئے شخص کی تصویر لیتا ہے اور اس کا نیورل نیٹ ورک یہ شناخت کرتا ہے کہ اس شخص کے چہرے پر کو نسا جذبہ یا کونسا تاثر موجود ہے۔

پھر یہ اپنے ڈیٹابیس کو کھنگال کر اسی تاثر کو اپنے مشینی چہرے پر لے آتا ہے۔ اسے بنانے والے انجینئرز کا کہنا ہے کہ مستقبل میں ٹیکن الوجی ایسے روبوٹس کو حقیقت کا میں کام آسکے کےہواا کام آسکے ہہواا ھیام آسکے ااوےا ںام آسکے ےاںو ن ن ب بل دںن اںو ن ن سر دوےن اںوی ن ب سکے ںاےون ن رف دویکھن




Supply hyperlink

About admin

Check Also

حیاتیاتی ارتقاء اور انسانی آنکھ

ڈاکٹر فراز معین اسسٹنٹ پروفیسر،پروٹیومکس سینٹر،جامعہ کراچیحیاتیاتی ارتقاء کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published.