وفاقی وزیر کے نجی بینک کا معاملہ؟


٭ وفاقی دارالحکومت کے سیاسی اور سرکاری حلقوں میں ایک وفاقی وزیر کے ” نجی بینک ” کی خریداری کے یںوالہ سے کئیر رد یار لوگوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ وفاقی وزیر کو ” ٹیکنو کریٹ ” کے طور پر وفاقی کابینہ میںاک شامل کییا گیگیا امل کییا گیگیا ہے کمل کییا گیگیا ہے کمل یا گیگیا ہے کیک ن ستر

وافقان حال کا کہنا ہے کہ وفاقی وزیر بننے سے قبل ان کے ‘بارے میں بعض تحفظات کی بناء پر بھی اس کے لئے لیکن عہدے ہونے کی سے ان کو اپنے’ ‘نجی بینک’ ‘کو خریدنے کے سلسلہ میں کئی طرف سے’ ‘پیشکشیں ” آگئی ہیں۔

وزارت خزانہ کے ایک اہم اعلیٰ افسر کا کہنا ہے کہ سابق خزانہ بجٹ کے حوالہ سے کام حر چکے تھے جس کا ” اخزر س زیو ما ” اکر ” اوو ​​مور اندر کی خبر رکھنے والوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ وفاقی وزیر سیاسی اثر و رسوخ رکھنے میں مہارت رکھتے ہیں۔ وہ سابق صدر زرداری کے دست راست اور حال ہی میں ” نیب ” سے رہا ہونے والے اکن ‘اکے بھی’ ‘سمدھی ا بھی’ ‘سیدھی’ ‘ہیں نور تن توت.

دو وزیر بھائیوں کا سیاسی مستقبل؟

*وفاقی دارالحکومت کے سیاسی اور سرکاری حلقوں میں وفاقی کابینہ اور صوبائی کابینہ میں شامل دو حقیقی کے بارے میں ” احتساب بیورو ” میں چلنے والی انکوائریوں کے حوالہ سے کئی خبریں گردش کر رہی ہیں. یار لوگوں کا کہنا ہے کہ جنوبی پنجاب سے تعلق والے یہ دونوں بھائی وزارتوں میں کے باوجود پنےبا ” میب ہےمب ب مب مب مب مب مب ترد

واقفانِ حال کا کہنا ہے کہ شوگر مافیا کمیشن کی رپورٹ اور ترین مقدمات کے تناظر حمیں وہ خخود بھیم ‘ظوم م شتامل ظومت میں شتامل حکظومت میں شتامل حکغیومت م شتام ہ

یہ بھی پتہ چلا ہے کہ حکومت کے اعلی عہدوں تعینات اعلی افسران نے بھی ان کو آنے دنوں کی ” الارمنگ صورت حال ” سے آگاہ کردیا ہے اور انہیں اعلی عدالتوں سے ” ریلیف ” لینے کے لئے رجوع کرنے کا دے دیا ہے ۔ اندر کی خبر رکھنے والوں کا کہنا ہے کہ بجٹ کے بعد پارٹی کے ” باغی ارکان ” کے خلاف سخت کارروائی ہوئی تو ان دونوں بھائیوں کا بھی وزارتوں سے ” فراغت ” کا واضح امکان ہے.

three ڈپٹی کمشنروں کی کہانی؟

٭صوبائی دارالحکومت کے سیاسی اور سرکاری حلقوں میں تین اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں کی تعیناتیوں پر تحفظات ۔و گر تحفظات او گر تحفظات او گر حفظر حفظر حو گر بر واقفان حال کا کہنا ہے کہ ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ کے بارے میں بعض ‘جو تفصیلات فراہم کی گئی ہیں اس میں مذکورہ خفیہ ادارے ذاتی کی جبکہ راولپنڈی حال ہی میں تعینات کئے جانے والے ڈپٹی کمشنر کو بھی اس سلسلہ ماضی کے کچھ واقعات اور تحقیقات کے سلسلہ میں ایسے ہی ” سوالات ” کا سامنا ہے۔

یہ بھی پتہ چلا ہے کہ ہفتہ ڈویژن کے ضلع میں ایک سکینڈل کی وجہ کمشنر کی فراغت کے جس خاتون کے عہدہ کا ہے بھی نے اداروں تفصیل فراہم کی ہے اس نے صوبے کی نام نہاد ” گڈ گورننس ” کا بھرم کھول دیا ہے. اندر کی خبر رکھنے والوں کا کہنا ہے کہ صوبے کے سب انتظامی عہدہ کے سربراہ اعلیٰ بیاوروکریٹ کمشو کی ااان ریٹ مشو حک اان ر مو حکتاان ر مشو حکتاان ت وں ور




Supply hyperlink

About admin

Check Also

پختونخوا حکومت عالمی اداروں سے 598 ارب کی مقروض

خیبر پختونخوا میں گرمی کی شدت میں اضافے کے باوجود ایک طرف حکومت اور اپوزیشن …

Leave a Reply

Your email address will not be published.